چست پاجاموں والی لڑکیوں کو جہاز میں بیٹھنے سے روک دیا گیا

انتظار فرمائیں۔۔۔

امریکا کے معروف فضائی ادارے یونائیٹڈ ایئرلائنز کے عملے نے دو لڑکیوں کو جہاز میں داخل ہونے سے روک دیا کیوں کہ وہ چست پاجامے پہنی ہوئی تھیں۔ عملے کی جانب سے لڑکیوں کے لباس کو غیر موزوں قرار دیا گیا اور انہیں لباس تبدیل کرنے کے بعد جہاز میں سفر کی اجازت دی گئی۔ سوشل میڈیا پر زبردست تنقید سہنے کے باوجود فضائی ادارہ اپنے عملے کے اقدام کو درست قرار دے رہا ہے۔

یہ دونوں لڑکیاں اتوار کے روز اپنے خاندان کے ہمراہ منیاپولس کے لیے روانہ ہورہی تھیں تاہم دروازے پر موجود عملے کے ایک رکن نے ان چست پاجاموں کی نشاندہی کرتے ہوئے انہیں جہاز میں بیٹھنے کی اجازت دینے سے انکار کردیا۔ عملے کا موقف تھا کہ ان لڑکیوں کو اسی وقت اجازت دی جائے گی کہ جب یہ اپنا لباس تبدیل کریں گے۔ اس موقع پر موجود میکسیکو جانے والی پروز کے انتظار میں بھی کئی افراد موجود تھے جن میں شینن واٹز شامل بھی شامل ہیں۔ انہوں نے واقعہ کی اطلاع ٹویٹر پر دی جس کے بعد یونائیٹڈ ایئرلائنز پر زبردست تنقید کا سلسلہ شروع ہوگیا۔

سوشل میڈیا پر ہونے والی تنقید کے جواب میں یونائیٹڈ ایئرلائنز نے اپنے موقف میں کہا کہ ایسے لباس زیب تن کرنا خلاف قانون ہیں جس سے دیگر مسافروں کو پریشانی کا خدشہ ہو۔ ادارے کے ترجمان جوناتھن گیورن نے واقعہ کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ دونوں لڑکیوں کا لباس ادارے کے قوانین سے مطابقت نہیں رکھتا اور اسی لیے انہیں تبدیل کرنے کا مشورہ دیا گیا تھا۔

ترجمان نے مزید کہا کہ ان کے لیے جہاز کا ہر مسافر قابل احترام ہے اور وہ اس کی پسند و ناپسند کو بھی اہمیت دیتے ہیں اسی لیے وہ تمام لباس بشمول پھٹی ہوئی یا بہت باریک پتلون اور شرٹ پہننے کی اجازت نہیں جس سے جسم کا اکثر حصہ یا زیر جامہ جھلکتا ہو۔ انہوں نے کہا کہ ہم اس پر زور نہیں دے رہے کہ لوگ ٹائی کوٹ پہن کر جہاز میں سفر کریں بلکہ ہم چاہتے ہیں کہ مسافر ایسا لباس پہنے جس سے ان کے یا دوسرے مسافروں کے آرمدے سفر میں خلل نہ پڑے۔

ادارے کا موقف سامنے آجانے کے بعد سوشل میڈیا پر ہونے والی تنقید میں کمی دیکھی جارہی ہے اور بہت سے لوگ ادارے کی ثابت قدمی کو سراہ رہے ہیں۔ تاہم کئی نامور شخصیات بشمول خواتین اداکاراؤں کی جانب سے یونائیٹڈ ایئرلائنز پر برہمی کا سلسلہ جاری ہے۔ اس حوالے سے ادارے کے ترجمان نے کہا کہ وہ تمام ناقدین کو حقیقت سے آگاہ کرنے کی کوشش کر رہے ہیں اور انہیں امید ہے کہ سوال کرنے والے تمام لوگ جلد مطمئن ہوجائیں گے۔

loading ads...

Facebook Comments



POST A COMMENT.