یوم پاکستان پر مقبوضہ کشمیر میں جوش و خروش

انتظار فرمائیں۔۔۔

23 مارچ کو یوم پاکستان کے موقع پر صرف آزاد کشمیر میں ہی نہیں بلکہ مقبوضہ کشمیر میں بھی زبردست جوش و خروش دیکھا گیا۔ بھارت کی جانب سے تمام تر منفی ہتھکنڈوں کے باوجود یوم پاکستان منانے کے لیے خواتین کی علیحدگی پسند انجمن دختران ملت نے خصوصی پروگرام منعقد کیا۔ اس موقع پر کشمیری خواتین نے پاکستانی پرچم لہرائے اور قومی ترانہ بھی پڑھا۔

یاد رہے کہ بھارت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر میں پاکستان کا پرچم لہرانے اور کسی بھی قومی دن کو منانے پر سخت پابندی عائد ہے۔ اس ضمن میں بھارتی فوج کے سربراہ نے ان تمام افراد کے خلاف کاروائی کا اعلان بھی کر رکھا تھا جو پاکستان سے اظہار محبت کی کوشش کرتے دکھائی دیں گے۔

اس موقع پر دختران ملت کی رہنما آسیہ اندرابی نے نامعلوم مقام یوم پاکستان کی تقریب میں شرکت کی۔ بعد ازاں اس تقریب کی ویڈیو سوشل پر پھیلا دی گئی۔

علیحدگی پسند خواتین رہنما نے کہا کہ ہم تمام تر خطرات کے باوجود ایک مقام پر جمع ہوئے ہیں تاکہ ہم پاکستان کے ساتھ اظہار یکجہتی کرسکیں اور دنیا کو بتاسکیں کہ جموں اور کمشیر کے مسلمان پاکستان میں رہنے والے بھائیوں اور بہنوں کے درمیان زندہ رہنا اور مرنا چاہتے ہیں۔

یوم پاکستان کی تقاریب میں شرکت کرنے والے کشمیری رہنماؤں کو بھارت نے پہلی ہی گھروں اور جیلوں میں نظر بند کر رکھا ہے۔ کشمیر کی آزادی کے لیے سرگرم رہنماؤں سید علی شاہ گیلانی، میر واعظ عمر فاروق اور شبیر احمد شاہ کو ان کے گھروں سے باہر نکلنے سے روک دیا گیا تھا۔ جبکہ جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کے سربراہ محمد یاسین ملک سرینگر کی سینٹرل جیل میں پابند سلاسل ہیں۔

loading ads...

Facebook Comments



POST A COMMENT.