پرانا فون مت پھینکیں بلکہ مفید استعمال میں لائیں

انتظار فرمائیں۔۔۔

کہتے ہیں دنیا میں کوئی بھی چیز بے کار نہیں ہوتی۔ بالکل ٹھیک کہتے ہیں اور یہ بات آپ کے پرانے استعمال شدہ فون پر بھی صد فی صد لاگو ہوتی ہے۔ نیا فون، ٹیبلیٹ خرید لینے کے بعد اکثر لوگ پرانے اسمارٹ فون درازوں یا الماریوں میں رکھ کر بھول جاتے ہیں۔ کیا ہی اچھا ہو کہ ہم ان پرانے فون کو بے کار رکھنے کے بجائے مفید کاموں کے لیے استعمال کریں۔ اگر آپ اب بھی نہیں سمجھے تو آئیے ہم آپ کو چند ایسے کام بتاتے ہیں جنہیں آپ پرانے فون سے بہتر طور پر انجام دے سکتے ہیں۔

الارم
صبح اٹھنے کے لیے اگر آپ الارم استعمال کرتے ہیں تو پھر پرانے وقتوں کی گھڑی کے بجائے موبائل فون استعمال کیجیے۔ آج کل تو ویسے بھی کئی منفرد ایپس دستیاب ہیں جو آپ کو انتہائی خوبصورت انداز سے صبح کا سلام پیش کرتی ہیں۔ یہ ایپس نہ صرف گنگنانے بلکہ باتیں کرنے کی بھی اہلیت رکھتی ہیں۔

01

سیکورٹی کیمرہ
پرانے فون، ٹیبلٹ یا لیپ ٹاپ کے کیمرے اور وائی فائی سے منسلک ہونے کی سہولت کا فائدہ اٹھا کر اس سے سیکورٹی سسٹم بھی بناسکتے ہیں۔ یوں تو اس کے لیے خصوصی ایپس بالکل مفت دستیاب ہیں لیکن اگر آپ ان تکنیکی پیچیدگیوں میں نہیں پڑنا چاہتے تو صرف اسکائپ اکاؤنٹ سے بھی یہ کام انجام دے سکتے ہیں۔ بس اپنے پرانے فون پر اسکائپ اکاؤنٹ بنائیں اور اسے ہر ویڈیو کال ازخود وصول کرنے کی اجازت دے دیں۔ پھر جب کبھی ضرورت ہو اسکائپ کال ملائیں اور براہ راست دفتر یا گھر میں ہونے والی سرگرمی دیکھیں۔

04

میوزک پلیئر
زیر استعمال فون میں زیادہ دیر تک موسیقی سنتے رہنے سے فون کی بیٹری ختم ہوسکتی ہے اور آپ اپنے اہم کام انجام دینے سے محروم رہ سکتے ہیں۔ اس لیے بہتر ہے کہ موسیقی سننے جیسے مشاغل کے لیے پرانے فون کو استعمال کریں۔ اس میں آپ ایف ایم ریڈیو کی ایپ بھی ڈال سکتے ہیں یا پھر اپنے من پسند گانوں کی فہرست بنا کر حسب ذائقہ لطف اٹھا سکتے ہیں۔

05

کار ٹریکر
اب کسی بھی فون کا سراغ لگانا مشکل کام نہیں رہا اور قانون نافظ کرنے والے ادارے اس پر خاصہ عبور حاصل کرچکے ہیں۔ اسی قابلیت کو استعمال کرتے ہوئے آپ اپنی گاڑی اور دیگر چیزوں کا بھی پتہ لگا سکتے ہیں۔ وہ کیسے؟ وہ ایسے کہ اپنا پرانا فون گاڑی کی ڈگی یا کسی اور خفیہ جگہ لگا دیں اور اسے انٹرنیٹ اور بیٹری سے منسلک کردیں۔ اس کے بعد گاڑی جہاں بھی جائے گی، یہ اسمارٹ فون بھی اس کے ساتھ جائے گا۔ اور یوں آپ باآسانی پتہ لگا سکیں گے کہ گاڑی کب کب کہاں کہاں کا سفر کرچکی ہے۔

03

بچوں کا کھلونا
آج کل دنیا میں ہر آنے والا بچہ سب سے پہلے اسمارٹ فون کی شکل دیکھتا ہے۔ اس میں بچے کا بھلا کیا قصور کہ جب اس نے آنکھ کھولی، کسی چاچے مامے یا پھوپھی خالہ کو فون سے تصویر کھینچتے ہوئے پایا۔ یوں پہلے دن سے ہی اسمارٹ فون سے انسیت شروع ہونے لگتی ہے اور جوں جوں بچے بڑے ہوتے ہیں وہ ان کا بہترین کھلونا بن جاتا ہے۔ والدین کو بھی روتے بچے کو چپ کروانے اور بھوکے بچوں کو بنا نخرے کھانا کھلانے کا طریقہ ہاتھ آگیا ہے تو وہ بھی خوشی خوشی انہیں اسمارٹ فون تھما دیتے ہیں۔ ایسے میں پرانا لیپ ٹاپ، فون یا اسمارٹ فون بچوں کے نام کرنا مفید ہوسکتا ہے بشرطیکہ اس میں صرف انہی کے کام کی چیزیں شامل کی جائیں اور انٹرنیٹ سے منسلک نہ رکھا جائے۔

02
loading ads...

Facebook Comments



POST A COMMENT.