یہ 5 کام، کھانے کے فوری بعد ہرگز نہ کریں

انتظار فرمائیں۔۔۔

تیز رفتار زندگی ہمیں اتنا موقع بھی نہیں دیتی کہ ہم کچھ دیر بیٹھ کر اپنی عادتیں کو پرکھ سکیں اور کاموں کو مناسب وقت پر انجام دینے سے متعلق سوچ سکیں۔ یہی وجہ ہے کہ دن بھر میں بے شمار کام ہم جب وقت ملتا ہے کر گزرتے ہیں اور ایک لمحے کو یہ خیال نہیں کرتے کہ کہیں اس وقت یہ کام کرنے کا نقصان تو نہیں۔ ایسے ہی چند کام لوگ رات کو کھانے کے بعد کے لیے اٹھا رکتے ہیں اور یوں جانے انجانے اپنا نقصان خود ہی کر بیٹھتے ہیں۔ آج ہم ایسے ہی چند کاموں کی طرف آپ کی توجہ مبذول کروا رہے ہیں کہ جو کھانے کے فوری بعد ہرگز نہیں کرنے چاہیئں کیوں کہ اس سے آپ کو فائدہ کی جگہ الٹا نقصان ہی ہوگا۔

غسل کرنا
گرم پانی سے غسل کرتے ہوئے ہمارے جسم کا درجہ حرارت تھوڑا بڑھ جاتا ہے اور اسی وجہ سے ہماری جلد کو خون کی روانی میں بھی اضافہ ہوجاتا ہے۔ کھانے کے فوری بعد خون کی روانی میں چھیڑ چھاڑ نظام ہاضمہ پر منفی اثر ڈالتی ہے۔ اسی لیے ماہرین کہتے ہیں کہ کھانا کھانے کے کم از کم 30 منٹ بعد غسل کرنا چاہیے۔

چائے پینا
ہم میں سے کئی لوگ کھانے کے فوراً بعد خود کو چست رکھنے کی نیت سے چائے پینا پسند کرتے ہیں۔ لیکن تحقیق سے ظاہر ہوا ہے کہ اگر کھانے کے فوری بعد چائے پی جائے تو اس سے غذا سے جسم کو ملنے والے آئرن کی بڑی تعداد ضائع ہوجاتی ہے۔ اس لیے بچوں، حاملہ خواتین اور آئرن کی کمی کا شکار دیگر افراد کو خاص طور پر کھانے کے بعد کم ازکم آدھ گھنٹے تک چائے پینے سے منع کیا جاتا ہے۔

شکم سیر سونا
گو کہ یہ خیال غلط ثابت ہوچکا ہے کہ کھانے کے فوری بعد سونے سے وزن بڑھتا ہے، لیکن اس عادت کے اور بھی کئی نقصانات ہیں جنہیں نظر انداز نہیں کیا جاسکتا۔ کھانے سے بھرے ہوئے پیٹ کے ساتھ سونے سے سینے میں جلن، تیزابیت اور پیٹ میں گیس جیسے کئی مسائل درپیش ہوسکتے ہیں۔ تحقیق سے یہ بھی ظاہر ہوا ہے کہ کھانے کے فوری بعد سونے والوں میں امراض قلب کا امکان بھی بڑھ جاتا ہے۔ اس لیے ماہرین کھانے اور سونے کے درمیان کم از کم 2 گھنٹے کا وقفہ تجویز کرتے ہیں۔

ورزش کرنا
چاہے آپ غذائیت سے بھرپور چیزیں کھانے میں استعمال کرتے ہوں یا پھر طاقتور چیزیں کھاتے ہوں، ماہرین کھانے کے فوری بعد ورزش سے پرہیز کا مشوورہ دیتے ہیں۔ اس کی بنیادی وجہ آپ کے پیٹ میں موجود کھانا ہے جو بے آرامی، ہچکی اور متلی کی وجہ بن سکتا ہے۔ اگر دن بھر میں کھانے کے بعد ورزش کے لیے وقت ملتا ہے تو پھر چہل قدمی سے شروعات کریں اور کم از کم دو گھنٹے گزر جانے کے بعد ہی ورزش شروع کریں۔

سگریٹ پینا
کھانے کے بعد انسان کے اندر انہضام کے عمل شروع ہوجاتا ہے ایسے میں اگر سگریٹ پی جائے تو یہ عام حالات کے مقابلے میں دوگنا زیادہ خطرناک ثابت ہوتی ہے۔ اس کے علاوہ جس طرح چائے آئرن کو ہضم کرنا مشکل بناتی ہے اسی طرح نکوٹین متعدد وائٹمن اور منرلز کو جسم میں شامل ہونے سے روکتے ہیں۔ اس لیے پہلی کوشش تو یہ کریں کہ سگریٹ پینا بالکل ہی چھوڑ دیں کیوں کہ اس کا سرے سے کوئی فائدہ نہیں۔ لیکن اگر آپ اسے نہیں چھوڑ پا رہے تو کم از کم کھانے کے 20 منٹ بعد تک بالکل ہاتھ نہ لگائیں۔

loading ads...

Facebook Comments



POST A COMMENT.