بستر کی چادریں ہفتے میں ایک بار نہ دھونے والے خبردار

انتظار فرمائیں۔۔۔

ہم سمجھتے ہیں کہ ہمارا گھر بہت صاف اور آرام دہ ہے۔ لیکن چاہے آپ گھر کی صفائی میں کتنے ہی تاک کیوں نہ ہوں، ایسی جگہ ضرور ہوتی ہیں کہ جو گرد، پھپھوندی، غلاظت اور مردہ انسانی خلیات کا ٹھکانہ بن جاتی ہے اور سب سے بری بات یہ کہ جراثیم کے سب سے بڑے ٹھکانوں میں سے ایک جگہ وہ ہے جہاں ہم خواب خرگوش کے مزے لیتے ہیں۔ جی ہاں! ہمارے بستر میں۔

روزانہ ہمارے 500 ملین خلیات سے جھڑتے ہیں، پھر ہمارا پسینہ، جسم کی چکنائی اور میل یہ سب رات کے وقت بستر پر جمع ہوتا رہتا ہے۔ اگر آپ اپنی چادروں کو بارہا نہیں دھوتے تو یاد رکھیں کہ 80 فیصد سے زیادہ بستروں میں کھٹمل اور دوسرے کیڑے ہوتے ہیں جو ہماری چادروں میں ڈیرے ڈالنا پسند کرتے ہیں اور ہماری مردہ جلد سے خوراک پاتے ہیں۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ اگر ہم ایک ہفتے میں اپنے بستر کی چادر کو نہیں دھوتے تو ہم خود کو خطرناک وائرس اور انفیکشن کے خطرے سے دوچار کرتے ہیں۔ اس میں جلدی و زخم کا انفیکشن، نمونیا اور خون کے بہاؤ کا انفیکشن بھی شامل ہے۔

گو کہ ماہرین ہفتے میں کم از کم ایک مرتبہ چادریں دھونے کا مشورہ دیتے ہیں، لیکن مردوں کی تو بات ہی نہ کیجیے۔ اگر کوئی تنہا رہتا ہے تو شاذونادر ہی اپنا بستر دھوتا ہو۔ البتہ عورتیں فطرتاً صفائی پسند ہوتی ہیں اور 44 فیصد خواتین ایسی ہیں جو ہفتے میں اپنے بستر کی چادریں دھوتی ہیں جبکہ 31 فیصد مہینے میں دو مرتبہ اور 16 فیصد مہینے میں صرف ایک مرتبہ۔

ان جراثیم سے چھٹکارا پانے کا آسان ترین طریقہ یہ ہے کہ ہفتے میں کم از کم ایک مرتبہ چادروں کو اس گرم ترین درجہ حرارت پر دھویا جائے، جہاں تک تجویز کیا گیا ہے۔ پانی جتنا گرم ہوگا، جراثیم مر جانے کا امکان اتنا زیادہ ہوگا۔ اگر آپ کو کسی چیز سے الرجی ہے تو پھر لازمی اس عمل کو اختیار کریں ورنہ بیمار پڑنے کے لیے تیار رہیں۔

loading ads...

Facebook Comments



POST A COMMENT.