یہ چھوٹا سا فون ہماری سب سے بری عادت چھڑا سکتا ہے

انتظار فرمائیں۔۔۔

یہ لائٹ فون ہے جسے اینٹی اسمارٹ فون کہا جا رہا ہے۔ یہ صرف دو کام کرتا ہے، ایک کال کرتا ہے اور دوسرا وصول کر سکتا ہے۔ اس میں نہ ہی ٹیکسٹ ہے، نہ ہی ٹوئٹر اور فیس بک اور کیمرہ بھی نہیں۔ دراصل اس کو بنانے والوں کا مقصد بھی یہی تھا کہ اسے ممکنہ حد تک لائٹ یعنی ہلکا رکھا جائے۔

سوچنے کی بات ہے کہ اس جدید دور میں آخر اس طرح کا فون بنانے کی کیا ضرورت تھی؟ دراصل کمپنی ہماری اسمارٹ فون لت کو ختم کرنا چاہتی ہے اور یہ فون انہی کے لیے جو اس بری عادت سے پریشان ہیں۔

یہ فون نیو لیب نامی ایک ٹیکنالوجی ادارے نے تیار کیا ہے جو امریکا کے شہر نیو یارک میں واقع ہے۔ اس ادارے کا آغاز جو ہولیئر اور کائی تانگ نے کیا تھا۔ ہولیئر کا پس منظر آرٹ، ڈیزائن اور فلم سازی کا ہے اور وہ ایک اسٹوڈیو چلاتے ہیں جبکہ تانگ پروڈکٹ ڈیزائن اور ڈیولپمنٹ سے تعلق رکھتے ہیں اور 10 سال تک دنیا کا سفر کیا ہے۔

لائٹ نے اپنا آغاز ستمبر 2014ء میں کیا تھا، اس مقصد کے ساتھ کہ "انسانوں کو ٹیکنالوجی کی اس پاگل دنیا میں اپنی آواز واپس دلائی جائے۔" ادارے نے اپنی پہلی پروڈکٹ، لائٹ فون، کو "فون سے دور فون" کے طور پر تیار کیا۔ لائٹ ڈجیٹل دنیا سے تعلق توڑنے اور اردگرد کی حقیقی دنیا سے منسلک ہونے پر زور دیتا ہے۔

اسے بہت معمولی حجم کا رکھا گيا ہے تاکہ لوگ اسے باآسانی لے جا سکیں، بالکل اپنے شناختی کارڈ اور بٹوے کی طرح۔

اس فون کی قیمت 150 ڈالرز ہے جبکہ سم کارڈ اور لائٹ کے سافٹویئر پلیٹ فارم کے لیے ماہانہ 5 ڈالرز ادا کرنے ہوں گے۔

01-light-phone
03-light-phone


04-light-phone


05-light-phone


06-light-phone


07-light-phone


08-light-phone

loading ads...

Facebook Comments



POST A COMMENT.