زمین بال بال بچ گئی

انتظار فرمائیں۔۔۔

کسی 10 منزلہ عمارت کے جتنا بڑا سیارچہ زمین اور چاند کے درمیان موجود نصف سے بھی کم فاصلے سے گزرا ہے اور خطرناک بات یہ ہے کہ اس سیارچے کا ہفتے کے دن ہی پتہ چلا تھا۔

2017 اے جی 13 نامی اس سیارچے کا پتہ یونیورسٹی آف ایریزونا کے کیٹیلینا اسکائی سروے نے چلایا تھا۔ یہ 50 اور 111 فٹ کے درمیان تک لمبا تھا اور زمین کے قریب سے گزرتے ہوئے اس کی رفتار 16 کلومیٹر فی سیکنڈ تھی۔

ماہرین کے مطابق زمین کو "چھو" کر گزرنے والا یہ سیارچہ بہت تیز اور بہت قریب تھا۔ جس کی براہ راست نشریات گزشتہ روز آن لائن پیش کی گئی۔ سائنس دانوں کے مطابق یہ زہرہ اور زمین دونوں کے مداروں سے گزرا۔

سائنس دان کئی سالوں سے کوشش کر رہے ہیں کہ ایسے کسی بھی سیارچے کے زمین سے ٹکرانے اور اس سے پھیلنے والی ممکنہ تباہی کو کیسے روکا جا سکتا ہے۔

2013ء میں روس کے علاقے چلیابنسک میں 56 فٹ کا ایک شہاب ثاقب گرا تھا جس سے ایک ہزار سے زیادہ افراد زخمی ہوئے تھے۔ اس کی کوئی پیشگی اطلاع نہیں تھی اور یہی چیز قابل تشویش ہے۔

loading ads...

Facebook Comments



POST A COMMENT.